دوسری جنگ عظیم کے بعد برطانیہ کو سب سے مشکل صورتحال کا سامنا ہے

برطانیہ کے قومی ادارہ برائے شماریات کے مطابق ، 2020 میں تقریبا 69،697،000 اموات رجسٹرڈ ہوئیں ، جن میں 81،000 سے زیادہ اموات کورونا وائرس کی وجہ سے ہوئی ہیں. رپورٹ کے مطابق ، موجودہ صدی میں برطانیہ میں ایک سال میں ہونے والی ہلاکتوں کی سب سے زیادہ تعداد ہے۔ قبل ، 1918 میں ، ہسپانوی فلو کا بدترین کیس برطانیہ میں 611،000 اموات ریکارڈ کیا گیا تھا۔برطانوی ادارے کی رپورٹ کے مطابق ہلاکتوں میں اضافے سے 5 سال کے دوران ہونے والی اموات کی اوسطاً شرح جنگ عظیم دوم کے دوران ہونے والی اموات کی شرح سے بھی بڑھ گئی ہے۔
خیال رہے کہ برطانیہ میں کورونا وائرس کے باعث اب تک ساڑھے 31 لاکھ سے زائد افراد متاثر ہوچکے ہیں جن میں سے 83 ہزار سے زائد افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔
کورونا کی دوسری لہر اور برطانیہ میں وائرس کی نئی قسم نے مزید مشکلات بڑھادی ہیں اورکورونا کےکیسز میں تیزی سے اضافہ ہورہا ہے، گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران بھی برطانیہ میں 45 ہزار سے زائد نئے کیسز آئے ہیں اور 1243 افراد کورونا سے ہلاک ہوئے ہیں۔
برطانوی میڈیا کے مطابق کورونا کے بڑھتے کیسز کے باعث انگلینڈ میں مزید سخت اقدامات کا امکان ہے۔
برطانوی وزیر اعظم بورس جانسن کا کہنا ہے کہ وائرس کی نئی وبائی قسم نے ملک بھر میں کورونا کیسز کی تعدادبڑھادی ہے اور 50 میں سے ایک شہری کورونا کا شکار ہے جب کہ لندن میں یہ شرح 30 میں سے ایک ہے جس کے بعدنیشنل لاک ڈاؤن کے علاوہ کوئی راستہ نہیں بچا۔
سیکرٹری صحت میٹ ہینکوک کا کہنا ہےکہ انگلینڈ میں سخت اقدامات کو مسترد نہیں کیا جاسکتا جب کہ چیئرمین ہیلتھ سلیکٹ کمیٹی جیریمی ہنٹ کا کہنا ہے کہ فروری میں قومی محکمہ صحت پرسخت دباؤ آسکتا ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں